’’ افغانستان کےاثاثےمنجمدرہےتو۔۔۔؟‘‘۔۔۔شاہ محمود قریشی نے کیاکہا؟

لاہور(رم نیوز)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا افغانستان کےحالات سےمتعلق ہمارےتحفظات ہیں۔افغانستان کی صورتحال پر توجہ کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا افغانستان میں فوری امدادنہ پہنچائی گئی توانسانی المیہ پیداہوسکتاہے۔ افغانستان میں خراب معاشی صورتحال کےبھیانک اثرات ہوں گے۔ افغانستان کی نصف آبادی خوراک کی کمی کاشکارہوسکتی ہے۔انہوں نے کہا افغانستان میں 32 لاکھ بچےخوراک کی کمی کاشکارہوسکتےہیں۔ افغانستان کےاثاثےمنجمدرہےتومعاشی بحران آسکتاہے۔2 کروڑسےزائدافغان خورا ک کی قلت کاشکارہوسکتےہیں۔

19 دسمبرکواسلام آبادمیں افغان صورتحال پراجلاس ہورہاہے۔اوآئی سی کایہ اجلاس 41 سال بعدہورہاہے۔ سعودی عرب اوآئی سی اجلاس کی صدارت کررہاہے۔انہوں نے کہا پی فائیوممالک،یورپی ایجنسی کوبھی اجلاس میں شرکت کی دعوت دی ہے۔ پوری دنیاکوافغانستان کےمسئلےکوسمجھنےکی ضرورت ہے۔ 7 دسمبرکوبرسلزمیں یورپی یونین نمائندگان سےملاقات کررہاہوں۔ یورپی پارلیمنٹ کےممبران سےبھی ملاقات ہوگی۔پوری دنیاکوافغانستان کےمسئلےکوسمجھنےکی ضرورت ہے۔