’’ہم ٹیکس لیں گے مگر ۔۔؟‘‘۔مفتاح اسماعیل نے بڑی بات کردی

اسلام آباد(رم نیوز)وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا مشکل حالات میں بجٹ پیش کیاگیا۔جو بجٹ پیش کیاگیا اس میں صرف امیروں پر ٹیکس لگایا گیا۔ہم ٹیکس لیں گے مگر یہ امیروں سے لیاجائے گا۔پی ٹی آئی دور میں بہت زیادہ ٹیکسز لگائے گئے۔پاکستان میں ہمیشہ غریب کے لیے ٹیکس ہوتا ہے۔آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدےمیں پیشرفت ہوئی ہے۔ غریب افرادپرٹیکس کابوجھ نہیں ڈالا ۔ وزیراعظم کےبیٹوں کی کمپنیوں پرٹیکس لگایاہے۔ میری کمپنی پربھی مزیدٹیکس عائدہوگا۔سابق حکومتی وزراہمیں آکربھاشن دیتےہیں۔

سابق حکومت نےجتنےبھی ٹیکس لگائےان سےغریب متاثر ہوا ہے ۔ عمران خان کہتےہیں لوگوں کونیوٹرل نہیں ہوناچاہیے۔گزشتہ روز چین نے 2.3 بلین ڈالرز معاہدے پر دستخط کیے۔ایک دو دن میں چین کی جانب سے پیسے پاکستان منتقل ہوجائیں گے۔کچھ دنوں میں ملک میں گھی بھی سستا ہوجائے گا۔ پونے 4 سال میں عمران خان نے 80 فیصدزیادہ قرض لیا۔عمران خان کی حکومت ملک کودیوالیہ کی نہج پر چھوڑ کرگئی۔ عمران خان 120 ارب روپےکاخسارہ چھوڑکرگئے ۔پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہمارےلیےآسان نہیں تھا۔عمران خان جب مارچ کر رہے تھے،حکمران بڑے بڑے فیصلے کررہے تھے ۔ہم جلد صورتحال پر قابو پالیں گے، 60 لاکھ خاندانوں کو ریلیف دیں گے۔دس لاکھ خاندان رجسٹر ہوچکے ہیں ، غریبوں کو اشیائے خورونوش سستا دیں گے۔بجٹ میں ٹیکس وصولیوں کا ہدف 438 اضافےکے ساتھ 7442 ارب روپے ہوگا۔