غضنفر گوجایوف۔۔۔آذربائیجان کی آرمینیا کے خلاف جنگ کا ہیرو

حافظ عرفان رانا
جنگیں محض ہتھیاروں،افواج کی تعداد سے نہیں بلکہ حوصلوں اور جذبوں سے لڑی جاتی ہیں۔ ایسی ہی جذبوں سے بھری متعدد کہانیا ں آذربائیجان اور آرمیان کی حالیہ جنگ کے دوران دیکھنے کو ملیں۔ ان میں ایک کہانی غضنفر گوجایوف کی بھی ہے جو اپنے دو بیٹوں کے ساتھ آرمینیا کے خلاف جنگ میں شریک ہوئے۔

غضنفر گوجایوف آذری فوج کے ریزرو آفیسرز ہیں۔ اور وہ آرمینیا کے خلاف جنگ کے چار ہیروز میں سے ایک ہیں۔ آذری قوم کے ہیرو 1967 میں زنگیلان میں پیدا ہوئے۔ وہ تین بچوں کے باپ ہیں ۔دو بیٹے اور ایک بیٹی ہیں۔ غضنفر لومونوسوف ماسکو سٹیٹ یونیورسٹی میں آٹو مکینک ہیں۔ انہوں نے دوسری کاراباخ جنگ میں اپنے دو بیٹوں کے ساتھ شرکت کی ہے۔

غضنفر گوجایوف نے بتایا کہ جب جنگ شروع ہوئی تو میرا بڑا بیٹا تو پہلے ہی فوج میں تھا۔ چھوٹا بیٹا بھی رضاکارانہ بڑے بیٹے کے ساتھ شامل ہوگیا اور کہا میں بڑے بھائی کو اکیلا نہیں چھوڑوں گا۔ میں نے بھی اپنے یونیورسٹی کے سربراہ سے اجازت لی اور فوج میں شامل ہوگیا۔ میرے بیٹے لڑ رہے تھے اور میں فوجی گاڑیوں کی آمد و رفت کو یقینی بنا رہا تھا۔ میں جنگ کے دوران تمام جنگی میدانوں میں گیا اور وہاں جو گاڑیوں میں تکنیکی خرابیاں تھیں انہیں دور کیا۔

انہوں نے کہا بعض اوقات میں اسی علاقے میں ہوتا تھا جہاں میرے بیٹے جنگ لڑ رہے تھے بعض اوقات کہیں اور۔میں نے جبرائیل، گوبادل، زنگیلان اور خوجاوند کے علاقوں میں جنگ میں حصہ لیا۔ ہم شوشا بھی گئے۔ جو جنگ میں شریک تھے تمام میرے بیٹے تھے وہاں کوئی تفریق نہیں تھی۔ میں نے نہ صرف اپنے بیٹے کی حفاظت کی بلکہ جو دیگر فوجی تھے انہیں بھی بچایا۔ میں نے ناتجرکار فوجی کو مشورے دیے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ میں کاراباخ کی پہلی جنگ میں بھی رضاکارانہ طور پر شریک ہوا تھا جس کے دوران میرے سر پر چوٹ لگی تھی۔ میری حالت انتہائی خراب ہوگئی تھی اور بیرون ملک علاج کے لیے جانا پڑا تھا۔ اللہ کا شکر ہے کہ میں آج صحت مند ہوں اور اپنے بچوں کے ساتھ مل کر آرمینیا کے خلاف لڑا ہوں۔ ہم نے آرمینیا کو تباہ کردیا ہے۔ پہلی جنگ میں اس نے جو ہمارا 20 فیصد زمین پر قبضہ کیا تھا ہم نے وہ چھڑا لیا ہے۔ شہریوں نے جنگ کے دوران فوجیوں کی جو مدد کی ہے اس سے ہمیں بہت حوصلہ ملا ہے۔

دشمن نے فوزولی میں مضبوط قلعہ بندی کی ہوئی تھی۔وہاں شدید لڑائی ہوئی۔ ہم نے آرمینین فوج کو منہ توڑ جواب دیا۔ انہوں نے بارودی سرنگیں بچھائی تھیں ان کی فوج اور آلات دونوں کو تباہ کرکے آذری فوج آگے بڑھی۔ فضائی دفاعی نظام جنگوں کو کنٹرول کرتا ہے۔ ہمارے ڈرونز نے جنگ کے دوران ہمیں بہت مدد دی۔